70

اہلیت کے بغیر کھیل کے میدان اور کیمرے کے سامنے کوئی نہیں رک سکتا یہ انسان کو ایکسپوز کر دیتے ہیں,مشتاق منہاس

اہلیت کے بغیر کھیل کے میدان اور کیمرے کے سامنے کوئی نہیں رک سکتا یہ انسان کو ایکسپوز کر دیتے ہیں,مشتاق منہاس

مظفرآباد:وزیر سپورٹس و امور نوجوانان راجہ مشتاق احمد منہاس نے کہا ہے کہ انٹرٹینمنٹ کے ہزاروں ذرائع کی موجودگی میں بچوں اور بچیوں کا کھیل کے میدان میں ہونا حوصلہ افزاء بات ہے۔ میری زندگیکی دلچسپی کا اسی فیصد پہلوسپورٹس ہی ہے، سپورٹس مین سے زیادہ زند ہ ضمیر، سچا اور انصاف پسند کوئی نہیں ہو سکتا۔ اہلیت کے بغیر کھیل کے میدان اور کیمرے کے سامنے کوئی نہیں رک سکتا یہ انسان کو ایکسپوز کر دیتے ہیں۔ ان خیالات کا اظہار وزیر سپورٹس وامور نوجوانان راجہ مشتاق احمد منہاس نے سپورٹس بورڈ کے زیر اہتمام کھیل کے شعبہ میں حسن کارکردگی دکھانے والوں میں تقسیم انعامات کی تقریب سے خطاب کر تے ہوئے کیا۔اس موقع پر سیکرٹری سپورٹس ظفر نبی بٹ،ڈائریکٹر جنرل سپورٹس اور دیگر آفیسران بھی موجود تھے۔ وزیر حکومت نے کہا کہ نوجوانوں لڑکوں اور با لخصوص بچیوں کو کھیل کے میدان میں دیکھ کر خوشی ہوئی کیونکہ ہمارے بچے گھروں میں مقید ہو گئے ہیں اور فیس بک،پب جی اور دیگر سوشل میڈیمز پر مصروف ہیں۔ کھیل کے میدانوں کی طرف رجحان انتہائی کم ہو چکا ہے۔ ہم میسر وسائل کے ساتھ ساتھ یونین کونسل لیول پر سپورٹس کو پروموٹ کر رہے ہیں۔ اس کے بعد وارڈ کی سطح پر جائیں گے۔راجہ مشتاق احمد منہاس نے کہا کہ جب سے میں نے ہوش سنبھالا کھیل سے دلی لگاؤ کی وجہ سے گراؤنڈ میں ہی زیادہ وقت گزارا۔میٹرک میں متحدہ پونچھ کی طرف سے اے کے نیشنل چیمپیئن شپ کھیلی۔میرپور تعلیمی بورڈ انٹر کالج ہاکی اور فٹبال ٹیم کے ونر سکوارڈ کا حصہ رہا۔ باغ سے تعلیم کے لیے لاہور جانے کا ارادہ بنا تو ایف سی کالج کی میرٹ لسٹ میں سپورٹس کی سیٹ پر داخلہ ملا اور پنجاب یونیورسٹی میں بھی سپورٹس کی نشست پر داخلہ لیا۔ پاکستان کی نیشنل جونیئر چیمپیئن شپ کا کیمپ بھی جوائن کیا لیکن اس دوران والدین کی طرف سے پرھائی پر زور ہونے کی وجہ سے آگے نہ جا سکا۔ 10سال تک نیشنل پریس کلب میں ٹیبل ٹینس کا چیمپیئن رہا۔

وزیر سپورٹس نے مزید کہا کہ آزادکشمیر زیادہ تر پہاڑی علاقہ ہے یہاں کھل کے میدانوں کی کمی ہے اسے پورا کریں گے جبکہ بڑے شہروں میں سپورٹس سٹیڈیم موجود ہیں۔ اس عمل کو گراس روٹ لیول تک لے جائیں گے۔سپورٹس مین نوجوانوں کو زندگی کی دیگر فرسودات سے نکال کر سپورٹس کی طرف لانے میں کردار ادا کریں۔نئی نسل کے اصل ہیرو کھلاڑی ہیں۔ دنیا کے ہیرو رونالڈو اور میسی ہیں۔ اسی طرح کرکٹ کے میدان میں ہمارے کشمیر سے تعلق رکھنے والے عبدالرؤ ف اور سلمان ارشاد پاکستان میں ہماری پہچان ہیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

thanks for your feedback