58

محکمہ جیل خانہ جات کا کام سزا دینا نہیں بلکہ قیدیوں کا احساس کرنا ہے،محمد اسحاق

محکمہ جیل خانہ جات کا کام سزا دینا نہیں بلکہ قیدیوں کا احساس کرنا ہے،محمد اسحاق

آزادکشمیر کے وزیر جیل خانہ جا ت چوہدری محمد اسحاق نے کہا ہے کہ محکمہ جیل خانہ جات کا کام سزا دینا نہیں بلکہ قیدیوں کا احساس کرنا ہے۔ سزاؤں کا تعین عدالتیں کرتی ہیں۔ ہم صرف قیدیوں کے امور کی نگرانی کرنے اور جیلوں میں انہیں سہولیات کی فراہمی کے ساتھ ساتھ ان کی اصلاح کے ذمہ دار ہیں۔ حکومت آزادکشمیر بھر میں موجود جیلوں میں سہولیات کی فراہمی کو یقینی بنا رہی ہے۔ جیلوں کی نئی عمارتیں تعمیر کی جا رہی ہیں۔ جیلوں میں قیدیوں کی اصلاح کا اہتمام کیا جا رہا ہے تاکہ وہ اپنی سزا پوری کرنے کے بعد معاشرہ میں اپنا مثبت کردار ادا کر سکیں اور جرائم کی دنیا سے باہر نکلیں۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے بدھ کے روز سپرٹنڈنٹ جیل خانہ جات یاسر سرفراز کاظمی کی ترقیابی کے موقع پر ان کو رینک پہنانے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پروزیر قانون سردار فاروق احمد طاہر، وزیر بحالیات راجہ محمد صدیق، وزیر لائیوسٹاک چوہدری محمد اسماعیل اور دیگر بھی موجود تھے۔ ایڈیشنل سیکرٹری داخلہ/انسپکٹر جنرل جیل خانہ جات مسعو دالرحمن نے اس موقع پر آزادکشمیر کے جیلوں کی صورتحال کے حوالہ سے تفصیلی بریفنگ دی۔ انہوں نے بتایا کہ آزادکشمیر بھر کی جیلوں کی حالت بہتری کی طرف جا رہی ہے۔ قیدیوں کی خوراک اور دیگر سہولیات کو بہتر بنانے کے لیے اقدامات کیے گئے ہیں۔آزادکشمیر کی چار جیلوں کی عمارات تکمیل کے آخری مراحل میں ہیں۔ پورے آزادکشمیر کی جیلوں میں قیدیوں کو جملہ سہولیات فراہم کر رہے ہیں۔وزیر جیل خانہ جات نے کہا کہ محکمہ جیل خانہ جات اپنے وسائل میں رہتے ہوئے بہترین کام کر رہا ہے۔اس کی کارکردگی لائق تحسین ہے۔ محکمہ کے آفیسران کی ترقیابیوں کا سلسلہ جاری ہے تاکہ آفیسران محنت سے کام کریں اور اپنے فرائض منصبی بہترین انداز میں سر انجام دیں۔ انہوں نے کہا کہ جیلوں میں قیدیوں کی اصلاح بھی ہونی چاہیے۔ ہمارا کام سزاد دینا نہیں سزا کے تعین کے اختیارات عدالتوں کے پاس ہیں۔ہم صرف عدالتوں کے فیصلوں پر عملد درآمد کرنے کے پابند ہیں۔ اس کے ساتھ ہی ساتھ ہماری یہ ذمہ داری ہے کہ ہم جیلوں میں قید افرا دکی اصلاح بھی کریں تاکہ وہ ذہنی طور پر جرائم کی دنیا سے نکل کر معاشرے میں اپنا مثبت کردار ادا کر سکیں۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

thanks for your feedback