43

پولیس، لینڈ مافیا

پولیس، لینڈ مافیا

عوامی تبصروں اور واقعات کے مطابق گذشتہ روز آزادکشمیر پولیس نے کھل کر لینڈ مافیا کا کردار کرتے ہوئے سینئر صحافی ابراہیم گل کے نو تعمیر شدہ مکان کی چھت کا لینٹر رکوا کر اسے پولیس کا رقبہ قرار دے دیا۔یہ رقبہ موضع نلوچھی کے آخری حصے میں تھوری چھتر کے بالمقابل موجود ہے جہاں 60سال سے زائد عرصہ سے ابراہیم گل کے والد آذر عسکری،خواجہ غلام محمد و دیگر چند ایک افراد کو رقبے نہ صرف الاٹ تھے بلکہ حقوق مالکانہ بھی حاصل کئے گئے تھے۔سابق کسٹوڈین خواجہ نذیر قادری کے دور میں جب گراس فارم کے رقبے فوج نے واپس کئے تو نامعلوم وجوہات کی بنا پر2004ء میں یہ رقبے زبردستی پولیس کے نام پر لیز میں ڈال دیے گئے۔یہ5سالہ لیز تجدید ہو کر اپریل 2020ء تک چلتی رہی۔اسی دوران لینڈ مافیا۔محکمہ مال اور کسٹوڈین اہلکاروں کی ملی بھگت سے گراس فارم کے دو بڑے اونچے خوبصورت ٹیلے لوگوں میں تقسیم (جعلی الاٹمنٹوں پر) ہو گئے۔تھوری کے مقابل جو رقبہ گراس فارم کا تھا وہ ناقابل تعمیر تھا۔مگر اُس وقت میں چند کالی بھیڑوں نے چند لوگوں کے مالکانہ حقوق والے رقبے بھی اس لیز میں لکھوا دیے جب اس پر درخواستیں گذاری گئیں تو کسٹوڈین کے اہلکاروں نے حصے مانگنے شروع کر دیے۔جس پر مقدمات تا حال کسٹوڈین اور عدالتوں میں زیر کار ہیں۔مگر پھر بھی یہ رقبے بار بار تجدید ہونے والی پانچ سالہ لیز پر ریکارڈ میں پولیس کے نام ظاہر کئے جاتے رہے۔اپریل2020ء میں لیز ختم ہونے کے بعد ابھی تک لیز تجدید نہیں ہوئی بلکہ نئے کسٹوڈین راجہ طارق نے مؤقف اختیار کیا ہے کہ اگر یہ رقبہ پولیس کو واقعی درکار ہو تو اسے ایوارڈ کروایا جائے۔اچانک پولیس کے نئے آئی جی صاحب بہادرنے حقا ئق سے لا علمی میں اس معاملے میں دلچسپی لینا شروع کر دی۔اور پولیس کے مقامی اور لینڈ مافیا سے تعلق رکھنے والے اہلکاروں نے گراس فارم کے اصل رقبے کے علاوہ ملحقہ قابل تعمیر رقبے پر بھی ہاتھ صاف کرنا شروع کر دیا۔لینڈ مافیا کے کارندے بھی گذشتہ دنوں پیمائش وغیرہ ہوتے وقت پٹواریوں کے ہمراہ موقع پر دیکھے جاتے رہے۔اب لینڈ مافیا کی ملی بھگت سے ہی پولیس نے ازخودالاٹی اور مالکانہ حقوق کے حامل ابراہیم گل کا کام رکوا دیا ہے۔جو قانون اور انصاف کے سراسر مغائر ہے۔اس لیئے حکومت اور کسٹوڈین کو راست اقدام اُٹھاتے ہوئے پولیس کو غیر قانونی قبضے سے روکتے ہوئے سہواً یا سازشاً اس لیز میں شامل ہوئے نمبرات خارج کر کے مالکان کے حوالہ کرنے چاہیئیں،اور لینڈ مافیا سے تعلق رکھنے والے پولیس اہلکاروں کو اس معاملے سے دور کر دینا چاہئے۔

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

thanks for your feedback