72

ستائیس اکتوبر 27 یوم سیاہ،آزادکشمیر بھر میں احتجاجی جلسے ،ریلیاں

ستائیس اکتوبر 27 یوم سیاہ،آزادکشمیر بھر میں احتجاجی جلسے ،ریلیاں

مظفرآباد:ہندوستان کی جانب سے27اکتوبر 1947کومقبوضہ جموں وکشمیر میں زبر دستی فوجیں اتارنے ، غاصبانہ قبضے اور ریاستی دہشتگردی کے خلاف ریاست کے دونوں اطراف ، پاکستان اور دنیا بھر میں مقیم کشمیر یوں نے یوم سیاہ منایا ۔ اس حوالہ سے آزادکشمیر بھر میں احتجاجی جلسوں کا انعقاد کیا گیا۔ اس حوالہ سے سب سے بڑا اجتماع دارلحکومت مظفرآباد میں منعقد ہوا جس میں تمام سیاسی جماعتوں کی لیڈر شپ ، آل پارٹیز حریت کانفرنس ، سول سوسائٹی اور تمام مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے افرادنے شرکت کی ۔تقریب سے وزیر اعظم آزادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدر خان ، آل پارٹیز حریت کانفرنس کے کنوینئر محمد حسین خطیب ،جموں وکشمیر پیپلزپارٹی کے صدر سردارحسن ابراہیم، آل جموںوکشمیر مسلم کانفرنس کے نائب صدر دیوان چغتائی ، نائب امیر جماعت اسلامی سید نذیر حسین شاہ نے خطاب کیا۔ جبکہ تقریب میں مشیر حکومت سردار ضیاء، ایڈیشنل چیف سیکرٹری جنرل فرحت علی میر ، سیکرٹریز حکومت ، سربراہان محکمہ جات اور مختلف مکتبہ فکر سے تعلق رکھنے والے افراد نے شرکت کی۔اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے آل پارٹیز حریت کانفرنس کے کنوینئرمحمد حسین خطیب نے کہا کہ آج 27 اکتوبر مظلوم کشمیریوں سے اظہار یکجہتی کے طور پر منا رہے ہیں تاکہ پیلٹ گن کے ذریعے بینائی سے محروم ہونے والے کشمیریوں ، عصمت دری ہونے والی بیٹیوں اور حالیہ شدید سردی میں تباہ شدہ گھروں میں رہنے والے مہاجرین کو بتا سکیں کہ ہم ان کے ساتھ ہیں ہم نے گذشتہ 73 سالوں میں تقرریوں سے کشمیر کو آزادکروانے کی کوشش کی جبکہ بھارت تدبیروں سے اقوام عالم کو اپنے ظلم و استبداد کے باوجود خاموش رہنے پر مجبو ر کر رہا ہے جبکہ ہمیں بھارت کو اقوام عالم کے سامنے جابر ثابت کرنا ہے ۔ ہم نے جموں کے ڈوگرہ ، دلت اور لبرل تنظیموں کو اپنے ساتھ شامل کیا ہے جو ہندوستان کے غاصبانہ قبضہ کو غیر آئینی سمجھتے ہیں ۔ ہمیں تدبیر سے مسئلہ کشمیر کو حل کروانے کے لیے کوشش کرنی ہے اور اس مشکل وقت میں مہاجرین کی دل جوئی بھی ضروری ہے ۔ ممبر آزادجموں وکشمیر قانون ساز اسمبلی سردار حسن ابراہیم نے کہا کہ غازی ملت سردار محمد ابراہیم خان نے 19 جولائی1947 کو اپنے گھر میں بیٹھ کر جو قرارداد پیش کی تھی اس کے مقاصد حاصل کرنے کے لیے کوشاں ہیں ۔ ہم نے پاکستان بننے سے 20 دن پہلے فیصلہ کیا تھا کہ ہم پاکستانی ہیں اور اس کا حصہ بنیں گے ۔ کوئی بھی منصوبہ تحریک آزادی کشمیر سے آگے نہیں جب تک اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق کشمیر آزاد نہیں ہوتا یہ جدوجہد جاری رہے گی۔ گلگت بلتستان مقبوضہ کشمیر کا حصہ ہے اور حکومت پاکستان گذشتہ 73 سال کی قربانیوں کا لحاظ کرتے ہوئے ایسا کوئی قدم نہ اٹھائے کہ لائن آف کنٹرول کے پار یہ پیغام جائے کہ پاکستان اپنے موقف سے پیچھے ہٹ گیا ہے ۔نائب صدر آل جموں وکشمیر مسلم کانفرنس دیوان علی چغتائی نے کہا کہ مسلم کانفرنس نے 19 جولائی 1947 کو قرارد اد الحاق پاکستان پاس کروائی کیونکہ ہمارے دل پاکستان کے ساتھ تھے جبکہ ہندوستان نے 27 اکتوبر1947 کو سرینگر میں فوجیں اتار کر وہ سلسلہ 5 اگست 2019 تک پہنچا دیا اب آزادکشمیر اور مقبوضہ جموں و کشمیر کی قیادت ایک پلیٹ فارم پر متحد ہو کر مشترکہ لائحہ عمل طے کرے ۔ میں مقبوضہ جموں وکشمیر کے لوگوں اور مسلح افواج پاکستا ن کی قربانیوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں جن کی وجہ سے تحریک آزادی کشمیر آج بھی زندہ ہے ۔ نائب امیر جماعت اسلامی آزادکشمیر سید نذیر حسین شاہ نے کہا کہ پاکستان کے رہنماوں سے گزارش ہے کہ کشمیر کی آزادی کے لیے عملی کوشش کریں ۔ گلگت بلتستان اور آزادکشمیر کو صوبہ بنانا کشمیر کی قراردادوں کے ساتھ غداری ہو گی ۔ تقریب کے اختتام پرشہداءکشمیراور تحریک آزادی کشمیر کی کامیابی کے لیے خصوصی دعا کی گئی ۔

راولاکوٹ: 27 اکتوبر یوم سیاہ کے موقع پر راولاکوٹ پونچھ گو انڈیا گو ریلی کاانعقاد کیاگیا .اس ریلی کی قیادت سردار ارشد نیازی اور ڈاکٹر عرفان کیانی نے کی جو منیر چوک میں پہنچ کر جلسہ عام کی شکل اختیار کر گئی . جس میں آج کے دن مقبوضہ کشمیر میں بھارتی افواج کی جموں کشمیر میں داخل ہو کر ضاصبانہ قبضہ کے خلا ف گو انڈیا گو کے نعرے لگائے گئے. جلسہ سے مقررین نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم اقوام متحدہ کی قرار دادوں کے مطابق رائے شماری تک یہ جدوجہد جاری رکھیں گے. مقررین نے کہا کہ بھارتی افواج مقبوضہ وادی کے اندر نہتے شہریوں پرظلم وستم کے پہاڑ ڈا رہی ہے عالمی برادری اور اقوام متحدہ کی خاموشی لمحہ فکریہ ہے. جب تک کشمیریوں کو ان کا بنیادی حق خودارادیت نہیں دیا جاتا آزادی کی یہ تحریک جاری رہے گی

جہلم ویلی ( پی آئی ڈی)مقبوضہ کشمیر میں 73 سال سے جاری بھارتی ظلم و بربریت کے خلاف جہلم ویلی میں بھرپور انداز میں یوم سیاہ منایا گیا ڈپٹی کمشنر طارق محمود ایس پی ریاض مغل اسسٹنٹ کمشنر عبدالقادر مغل ایم ایس ظفر اقبال مغل ،ڈی ای او مردانہ راجہ عتیق احمد خان، ڈی ایس پی سیدرضا گیلانی ،اسسٹنٹ ڈائریکٹر ریسکیو 1122 سردار نجم سدوزئی اسسٹنٹ ڈائریکٹر لوکل گورنمنٹ شکیل گیلانی راجہ ساجد عظیم صدر مرکزی انجمن تاجران ضلع جہلم ویلی سید فیصل گیلانی ، خان ،سیاسی وسماجی شخصیت پیر سید احسان الحسن گیلا نی ،صدر ڈسڑکٹ بار ظفر اقبال مغل ،صدر پرائیوٹ سکول ایسوسی ایشن ضلع جہلم ویلی طیب منظور کیانی ،افسر مال محمد شکیل ،تحصیلدار سید صابر نقوی ایس ایچ او سٹی راجہ عنصر سجاد،ایس ایچ او سی آئی اے راجہ یاسر، سمیت سرکاری،غیر سرکاری اداروں،وکلاء سول سوسائٹی، سکول کے طلباء سول سوسائٹی,شہریوں,مذہبی نمائندوں,صحافیوں اور تاجروں نے سڑکوں پر نکل کر کالے جھنڈے,کالی پٹیاں باندھ کربھارت مخالف شدید نعرے بازی اور احتجاجی مظاہر ہ کیا اورعالمی برداری سے مطالبہ کیا گیا کہ بھارت سے کرفیو ختم کروایا جائے اور مظلوم کشمیریوں کو آزادی دی جائے تفصیلات کے مطابق جہلم ویلی میں بھارت کے خلاف یوم سیاہ بھرپور اندازمیں منایا گیا یوم سیاہ کے موقع پرڈی سی آفس سے ایک بڑی ریلی کا انعقاد کیا گیا جس کی قیادت ڈپٹی کمشنر راجہ طارق محمود نے کی.ریلی ڈپٹی کمشنر آفس سے نکالی گئی اور ندول سٹیڈیم کے پاس جا کر اختتام پذیر ہوئی

ریلی سے خطاب کرتے ہوئے ڈپٹی کمشنر طارق محمود نے کہا نے کہا کہ ہندوستان کے زیرِ انتظام کشمیر کے اندر غیر ریاستی لوگوں کو پزیرائی دی جا رہی ہے جس کی شدید الفاظ میں مزمت کرتے ہیں 1947 سے لیکر آ ج تک لاتعداد کشمیریوں نے جانوں کا نذرانہ پیش کیا انہوں نے کہا 6 نومبر 1947 کا دن بھی ہمیں یاد ہے اس واقع کو بھی فراموش نہیں کیا جا سکتا لاین آ ف کنڑول پر بسنے والے کشمیریوں جن کے ہاتھوں میں کوئی بندوق نہیں ہے ان کے اوپر بھی ظلم وبربریت کے پہاڑ ڈھاے جا رہے ہیں جس کی شدید الفاظ میں مزمت کرتے ہیں،انہوں نے کہا عالمی برادری 73سالوں سے ہماری بات نہیں سن رہی کشمیر صرف باتوں سے نہیں عملی کوشش سے آزاد ہو گا 1947 سے لے کر آج تک مسلمانوں کے ساتھ ظلم ہوا مسلمان آج بھی بھارت کے مظالم سے مر رہے ہیں کرفیو ختم کیا جائے بھارت ظلم بند کرے۔بھارتی تسلط کو مسترد کرتے ہیں۔بہادر مسلح افواج کو سلام پیش کرتے ہیں ان کی جرات اور بہادری کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں، اور آ ج کے دن سے یہ عظم اور ارادہ کرتے ہیں کہ کسی بھی قسم کی قربانی کی قربانی سے دریغ نہیں کریں گےریلی کے اختتام پر بانی چیف کوارڈنیٹر ومنتظم اعلی مرکزی سیرت کمیٹی ضلع جہلم ویلی پیر سید احسان الحسن گیلانی نے کشمیری کی آزاد ی کے لیے خصوصی دعا کی

نیلم:کشمیر پر بھا رت کے نا جا ئز قبضے کے خلا ف دنیا بھر کی طر ح نیلم میں بھی یو م سیا ہ کے طور پر منا یا گیا،ڈسٹرکٹ ہیڈ کوارٹر آٹھمقام میں ایک پر وقار تقریب کا انعقاد کیا گیا جس کی صدارت ڈپٹی کمشنر نیلم راجہ محمود شاہد نے کی،ڈسٹرکٹ کمپلکس آٹھمقام میں تقریب کا باقاعدہ آغاز ہو،ا بعد ازاں شرکاء نے ریلی نکال کر لاری اڈا آٹھمقام میں ایک جلسہ کی صورت اختیار کر کے کشمیر پر بھارتی ناجائز قبضہ نامنظور،اور فرانس میں پیغمبر اسلام ﷺکی شان میں گستاخ خانہ خاکوں کی اشاعت کے خلاف عوام کے جم غفیر نے فلک شگاف نعرے لگا کر جابرانہ قبضہ اور مسلمانوں کے جذبات مجروع کرنے کی شدید الفاظ میں مذمت کی،تقریب سے ڈپٹی کمشنر نیلم راجہ محمود شاہد نے خطاب کرتے ہوے کہا کہ آج کا دن سیاہ ترین دن ہے بھارت کی قابض افواج نے مظلوم کشمیریوں کو شہید کر کے ریاست جموں و کشمیر کے بڑے حصے پر غاصبانہ اور جابرانہ قبضہ کر کے اقوام عالم کے سامنے جمہوری ہونے کے جھوٹے دعوے کر رہا ہے،مظلوم کشمیری اپنی آزادی کا خواب بہت جلد پورا ہوتے دیکھیں گے انہوں نے کہا کہ اسلام کے خلاف اس وقت صسہونی اور طاغوتی قوتیں بر سر پیکار ہیں،نبی پاکﷺ کی شان میں گستاخی کرنے والوں سے ہر طرح کا بائیکاٹ کیا جائے اور ان سے سفارتی،سیاسی،وسماجی تعلقات ختم کر کے ملعون سیلمان رشدی کی ناجائز اولاد کو مسلمانوں کے حوالے کیا جائے،اور اسے سر عام پھانسی دی جائے،اسلام پیار محبت اخوت اور بھائی چاری کا نام ہے اس وقت پوری مسلم امہ کی جذبات کو مجروع کر کے عالم کفر میں شادیانے بجائے جا رہے ہیں،جس کی ہم پرزور مذمت کرتے ہیں،بھارت 73سالوں سے کشمیریوں کی نسل کشی کرنے میں لگا ہوا ہے،لاکھوں بے گناہ افراد کو شہید کیا،ہزاروں بے گھر ہوئے اور کئی اپاہیج ہوے،ماؤوں بہنوں کی عصمت دریاں کی گئیں،ہزاروں نوجوان جیل میں پڑے ہوئے ہیں مگر انسانی حقوق کے علمبرداروں کے مردہ ضمیر نہ جاگ سکے،گزشتہ سال پانچ اگست کو بھارت نے فوجی طاقت کے زریعے ریاست جموں کشمیر کی شناخت کو ختم کر کے جبری طور پر اپنا آئینی حصہ ظاہر کیا اقوم عالم کی کشمیر پر خاموشی خطرے کی گھنٹی ہے،ہمیں کسی کے بہکاؤے میں نہیں آنا ہمیں اپنی صفوں میں اتحاد یگانگنت پیدا کر کے کفار کا مقابلہ کرنا ہو گا،ہمارے اسلاف اور وجہ کائینات کی شان میں ناپاک حرکت کرنے والوں کا ہم پیچھا کریں گے،حکومت پاکستان و آزاد کشمیر فوری طور پر مشترکہ اجلاس بلا کر نبی پاک ﷺ کی شان میں گستاخی کرنے والے اور ان کے سہولت کاروں کے خلاف کاروائی کرتے ہوئے عالم اسلام کی مجرمانہ خاموشی اور ان کی منافقانہ پالیسیوں کو مسترد کرتے ہوئے فرانس کے ساتھ ہر طرح کی تجارتی اور اقتصادی،سفارتی روابط ختم کیئے جائیں اس موقع پر،ایس پی نیلم عمران ساجد،اسسٹنٹ کمشنر آٹھمقام سید عمران عباس نقوی،ایکسٹرا اسسٹنٹ کمشنر خواجہ محمد سلطان،تحصیلدار آٹھمقام ہارون الرشید، خواجہ عارف مصطفائی،اختر ایوب،تاجران،صحافی،وکلا اور سول سوسائٹی و دیگر افراد موجود تھے ۔

سماہنی:سماہنی میں اسسٹنٹ کمشنر سماہنی حافظ محمد علی کی زیر قیادت 27 اکتوبر یوم سیاہ کے حوالہ سے احتجاجی مظاہرہ ہوا۔ احتجاجی مظاہرہ میں سب ڈویژن سماہنی کے جملہ ڈیپارٹمنٹ کے سربراہان نے شرکت کی مظاہرین نے نعرہ بازی کی اسسٹنٹ کمشنر سماہنی نے احتجاجی مظاہرہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بھارتی افواج کے غاصبانہ قبضے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہیں اور انشاللہ وہ دن دور نہیں جب کشمیر کی آزادی کا سورج طلوع ہو گا

اس خبر پر اپنی رائے کا اظہار کریں

thanks for your feedback